مشرقی شام میں موسیقی کے ذریعہ داعش کے بچوں کا علاج

مشرقی شام میں موسیقی کے ذریعہ داعش کے بچوں کا علاج

پیر, 23 March, 2020 - 19:45
شام کے مشرق شمال میں ہول کیمپ کے خیموں میں تفریح کرتے ہوئے بچوں کو دیکھا جا سکتا ہے (الشرق الاوسط)
القامشلی: کمال شیخو
میں نے ایک بڑے باکسر بننے کا خواب دیکھا تھا اور میں روس کے سب سے مشہور باکسر ڈینس لیبیڈیو کی طرح بنوں گا، ان الفاظ کے ساتھ 16 سالہ نیکولائی نے مشرق وسطی کے سب سے زیادہ گرم ممالک میں سے ایک ملک شام جانے کے لئے 6 سال قبل اپنے سفر کی داستان سنانا شروع کردی ہے اور اس بچہ کا تعلق سراتوف سے ہے جو جنوبی روس میں وولگا کے کنارے پر واقع ہے اور وہاں درجۂ حرارت صفر تک پہنچ جاتا ہے۔
جون 2014 میں داعش کی طرف سے اپنی مبینہ خلافت کا اعلان کرنے کے بعد نیکولا اپنے والدین اور بہن بھائیوں کے ساتھ استنبول کے اتاترک ایئرپورٹ پر اترا تاکہ وہ غیر قانونی طور پر ادلب میں داخل ہو سکے اور اس کے والد نے انہیں اس فریب کے حاصل ہونے کے سلسلہ میں بتایا تھا لیکن فرات کے مشرق میں واقعے"داعش" کے آخری قلع الباغوز سے انہیں بھگانے کے لئے ہونے والی لڑائیوں کے دوران اس کے والد نے کرد اور عرب پر مشتمل شام کی ڈیموکریٹک فورسز کے سامنے ہتھیار ڈا لدی اور آج 23 ہی کو یہ سب ہوا تھا گویا کہ اس قصہ کو ایک سال ہو چکا ہے۔(۔۔۔)
پیر 28 رجب المرجب 1441 ہجرى - 23 مارچ 2020ء شماره نمبر [15091]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا